EhtesabTV | ہر لمحہ باخبر
باب کعبہ کے ساتھ سنگ مرمر کے 8 ٹکڑے کیوں نصب ہیں؟
مکہ مکرمہ: (ویب ڈیسک) غیر ملکی خبر رساں ادارے العریبہ ڈاٹ نیٹ میں چھپنے والی رپورٹ میں باب کعبہ کے ساتھ متصل سنگ مرمر کے آٹھ ٹکڑوں کی تاریخ کے بارے میں بتایا گیا ہے جن کے بارے میں شاید بہت ہی کم لوگ جانتے ہونگے۔ بھورے زردی مائل رنگ کے پتھر ایک اندازے کے مطابق 8 سو سال سے زائد عرصے سے نصب ہیں اور انھیں ’میری سٹون‘ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ مورخین کا کہنا ہے کہ سنگ مرمر کے یہ 8 ٹکڑے باب کعبہ کے قریب المعجن کے مقام پر نصب ہیں۔ صحن مطاف میں یہ جگہ نیچے کی سمت میں ہے۔ تاریخی روایات کے مطابق یہاں پر جبریل علیہ السلام نے بعث نبوی کے بعد پہلی بار نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو نماز سکھائی تھی۔ معجن سفید رنگ کی ریت سے تیار کی گئی ہے اور اس کے نیچے یہ آٹھ ٹکڑے نصب ہیں۔ سنہ 1213ھ سے 1377ھ تک یہ پتھر چوری ہو گئے تھے۔ معجن کی جگہ چونکہ کافی تنگ ہے اور وہاں پر ایک وقت میں صرف ایک ہی شخص کھڑا ہو کر نماز پڑھ سکتا ہے، اس لیے وہاں سے یہ پتھر ہٹا کر شاذروان میں باب کعبہ کے پہلو میں لگا دیے گئے تھے۔

حرمین شریفین کے امور کے محقق محیی الدین الھاشمی کا العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ سنگ مرمر کے یہ ٹکڑے عباسی خلیفہ ابو جعفر منصور نے مسجد حرام کے لیے ہدیہ کیے تھے۔ انہوں نے یہ پتھر صحن مطاف کی مرمت کے وقت 631 ہجری میں دیے۔ سنگ مرمر کے نیلے رنگ کے پتھر پر اس کی تاریخ درج ہے۔ الھاشمی نے کہا کہ باب کعبہ سے متصل ان سنگ مرمر کے ٹکڑوں پر شاندار نقش ونگار اور پھول بوٹے بنائے گئے ہیں۔ حجم میں یہ ٹکڑے برابر نہیں بلکہ الگ الگ جسامت کے ہیں۔ ان میں سے بڑا ٹکڑا 33 سینٹی میٹر لمبا اور 21 سینٹی میٹر چوڑا ہے۔

ان پاکستانیوں کو دولے شاہ کے چوہے کیوں کہاجاتاہے اور کس وجہ سے ان کے سر ایسے ہوجاتے ہیں؟ جانئے وہ بات جسے جان کرہرپاکستانی افسردہ ہوجائے

 

گجرات(ڈیلی پاکستان آن لائن )مزارات پر مذہب کے نام پر بہت کچھ ہورہاہے جن میں سے کچھ کام ایسے ہیں جنہیں آپ درست سمجھتے ہیں جبکہ کچھ ایسے ہیں کہ انہیں آپ باآسانی مستردکرسکتے ہیں جبکہ پاکستان میں news-1483262718-2290_largeمذہب کے نام پر مختلف رسومات بھی پائی جاتی ہیں جن میں سے ایک گجرات کے شاہ دولے کا مقبرہ اور شاہ دولے کے چوہے بھی ہیں ۔ بچے اللہ تعالی کی سب سے زیادہ کمزور مخلوق ہیں اور انہیں ڈھالنا نہایت آسان ہوتاہے ، شاہ دولے کے مزار پر بھی کچھ ایسا ہی ہوتاہے جہاں صحت مند بچوں کو ایسے رنگ میں ڈھالا جاتاہے جنہیں بعد میں شاہ دولا کے چوہے کہاجاتاہے۔
نیوزویب سائٹ’پڑھ لو‘ کے مطابق مختلف پیروں فقیروں کے دربار پر جانا اور اپنی منتیں ماننے کارواج پاکستان میں عام ہے لیکن شاہ دولے اور اس کے چیلوں کے لیے ہمدردی کو فروغ دینے کے لیے ’چوہے ‘ بنائے جاتے ہیں ، جب بچے پیداہوتے ہیں تو یہاں ان کے سروں پر ایک لوہے کا کڑا پہنادیاجاتاہے جس کی وجہ سے ان کا دماغ، سر اور چہرہ بڑھوتری کے عمل سے نہیں گزرسکتاجبکہ دیگر جسم معمول کے مطابق بڑھتارہتاہے ۔

اس مزارکی روایت کے مطابق تمام ترکاوشوں یعنی علاج معالجے سمیت ہرطرف سے ناکامی کے بعد مایوس ہوکربے اولاد جوڑے یہاں آتے ہیں اور اولاد کیلئے دعا کرتے ہیں،اگر ان کے ہاں بچوں کی پیدائش ہوتی ہے تو پہلا بچہ مزار کی انتظامیہ کو ’عطیہ‘ کردیاجاتاہے ، ایسے بچوں کو بعد میں شاہ دولہ کے چوہوں میں تبدیل کردیاجاتاہے جو بعد میں شاہ دولہ کے مزارکے اطراف اور ملک بھر کے دیگر شہروں میں بھیک مانگنے نکل پڑتے ہیں۔
بھکاری مافیا کے زیراہتمام یہ بچے جو کچھ اکٹھاکرتے ہیں ، وہ مزار کی انتظامیہ کوجاتاہے ، سب سے حیران کن بات یہ ہے کہ انسانی حقوق کی سریحاً خلاف ورزی مزار پر کئی عشروں سے جاری ہے لیکن حکومت یا متعلقہ اداروں نے تاحال چپ کا روزہ رکھا ہواہے ۔ بتایاگیاہے کہ لمبے سفید لباس، چھوٹے سر اور معمول کے جسم کے یہ افراد عوام میں ہمدردی کا عنصر جگانے گھومتے ہیں اور پھر رقم بٹورتے ہیں۔
آئین کے آرٹیکل 328کے مطابق والدین یا سرپرست کی طرف سے12سال سے کم عمر بچے کو ترک کرنا جرم ہے لیکن ایسے واقعات میں والدین اپنے نومولود بچوں کو مزار کی انتظامیہ کے سپرد کردیتے ہیں جہاں انہیں تکلیف دہ مراحل سے گزرنا پڑتاہے ،جبکہ سیکشن 332کے تحت کسی بھی شخص کے کسی عضو کو توڑنے ،مروڑنے ، غیرفعال کرنے ، اپنی جگہ سے ہٹانے سمیت اس قسم کے دیگر کام بھی جرم ہیں لیکن مزار پر یہ سلسلہ جاری و ساری ہے اور پولیس بھی خواب غفلت کی نیند میں ہے ۔
جہانگیر خان ترین سیکریٹری جنرل پاکستان تحریک انصاف کا لودھراں کے علاقہ گوگڑاں میں دورہ

jkt-in-gogran-visit

احمد خان بلوچ کا رورل ہیلتھ سنٹر گوگڑاں میں والہانہ استقبال پھولوں کی پتیاں نچھاور کی گئیں
img-20161224-wa0048

رورل ہیلتھ سنٹر گوگڑاں میں بروز ہفتہ شام پانچ بجے پہنچے تو ایم ایس ڈاکٹر محمد اکرم چوہدری ، ملک محمد اعجاز بھٹہ ، ملک محمد افضل نیو پریس کلب گوگڑاں سے چیئرمین شیخ حضور بخش، سینئر نائب صدر رانا محمد ارشاد اتیرا، جنرل سیکرٹری شیخ عرفان احمد، نائب صدر ظفر شہزاد،فنانس سیکرٹری محمد شفیق مجاہد اور اس کے علاوہ سینکڑوں لو گوں نے سردار احمد خان بلوچ کا والہانہ پر جوش استقبال کیا اور پھولوں کی پتیاں نچھاور کیں ،اس دوران سردار احمد خان بلوچ نے رورل ہیلتھ سنٹر گوگڑاں میں آئے ہوئے لوگوں سے خطاب بھی کیا جس میں خصوصاً 6لاکھ روپے کے فنڈز مہیا کرنے کا اعلا ن کیا جسے رورل ہیلتھ سنٹر گوگڑاں میں فرش بندی کی جائے گی، سردار احمد خان بلوچ نے کہا کہ میری کوشش ہوگی کہ رورل ہیلتھ سنٹر گوگڑاں کے لئے مزید فنڈ ز بھی مہیا کر سکوں مجھے مشیر اور منسٹری کے لئے پیشکش ہوئی لیکن میں نے ٹھکرا دیا ،میں نے علاقہ کی خدمت کرنے کو ترجیح دی میں آپ کے مسائل حل کرنا پسند کرتا ہوں میرا وعدہ ہے کہ گوگڑاں کو دل سے سجاؤں ناجائز تھانیداری دور کرنی ہے پولیس کا ظلم ختم کرنا ہے میں چور ،بدمعاش اور ڈکیٹ کے خلاف ہوں میں ہمیشہ حق اور سچ کا ساتھ دیتا رہا ہوں اور دیتا رہوں گا میں 40سال سے آپ کی خدمت کر رہا ہوں میں نے بغیر رشوت کے لوگوں کو ملازمتیں دلوائی ہیں میں کرپشن پر لعنت بھیجتا ہوں میری دعا ہے کہ اللہ آپ کو ہر پریشانی سے بچائے ۔آمین آخر میں رورل ہیلتھ سنٹر گوگڑاں میں ماحول کی خوبصورتی کو مد نظر رکھتے ہوئے پودا لگا کر رورل ہیلتھ سنٹر میں شجر کاری مہم کا بھی آغاز کیا۔

آئندہ صدر آصف زرداری ہوں گے، بلاول بھٹو

لاہور : پاکستان پیپلز پارٹی کے سربراہ بلاول بھٹو کا کہنا ہے کہ آئندہ انتخاب میں بھرپور کامیابی حاصل کریں گے اور آئندہ صدر، وزیراعظم، چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ اور میئر کراچی اور حیدرآباد پی پی کا ہوگا۔

وہ بلاول ہاؤس لاہور میں جاری پاکستان پیپلز پارٹی کی یوم تاسیس کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے انہوں نے کراچی کے مقامی ہوٹل میں لگنے والی آگ سے جاں بحق ہونے والے افراد کے لیے فاتح خوانی کروائی اور سندھ حکومت کو ملزمان کے خلاف تادیبی کارروائی کر کے عدالت مین کٹہرے میں لانے کی ہدایات جاری کیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ میں ایک ہفتے سے پنجاب میں موجود ہوں لیکن یہاں سیاست کے لیے نہیں آیا ہوں بلکہ پنجاب میں جمہوری قبضے کے لیے لاہور آیا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان ان ن لیگ ایکشن پلان بن چکا ہے، جس کی آڑ میں دہشت گردوں کو نشانہ بنانے کے بجائے کبھی ڈاکٹر عاصم حسین جیسے سیاسی ورکرز تو کبھی ایان ملک کو پکڑ کر سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جاتا رہا۔

بلاول بھٹو نے چوہدری نثار کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وفاقی وزیر داخلہ کم ہمت ہیں وہ دہشت گردوں کے بجائے سیاسی جماعت کو نشانہ بنا رہے ہیں یہ وہی شخص ہیں جنہوں نے بیت اللہ محسود کے قتل ہونے پر غم کا آنسو کے بہا رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں سے مقابلہ ہمارے فوجی جوان کر رہے ہیں،عام عوام کر رہے ہیں اور بھٹو کے اہلِ خانہ اپنی جانوں کے نذرانے دے کر دہشت گردوں سے مقابلہ کر رہے ہیں چوہدری نثار تو صرف سیاسی انتقام لے رہے ہیں۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ اگر یہی جذبہ رہا تھا تو ہمارا وزیراعظم ہو گا، صدر ہمارا ہوگا، پنجاب سمیت تمام صوبوں کے وزرائے اعلیٰ پیپلز پارٹی کا ہوگا سندھ کا گورنر بھی پی پی کا ہوگا اور میئر کراچی اور حیدر آباد بھی پی پی کا ہوگا۔

آخر میں انہوں نے پارٹی کے حق میں کارکنان سے بلند شگاف نعرے لگوائے اور گلگت بلتستان اور کوہستان میں جلسہ عام کرنے کا بھی اعلان کیا۔

وقت کا فرعون مروا سکتا تھا ،مگر پروا نہ کی،مصطفیٰ کمال
l_153503_093336_updates

پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین مصطفیٰ کمال کا کہنا ہے کہ وقت کا فرعون مروا سکتا تھا ،مگر زندگی کی پروا نہ کی اور بغاوت کردی ،ایم کیو ایم کو چھوڑنے پرلگا جیسے کوئی اچھا کام کر لیا ۔

لاہور ہائی کورٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ آج بھی کئی لوگ الطاف حسین کو بانی مانتے ہیں ،اللہ کا شکر ہے کہ اس نے سیدھا راستہ دکھا یا اور آنکھوں سے پردے ہٹا دئیے ۔

ان کاکہنا تھا کہ سینیٹر بننے کے لیے لوگ پچاس پچاس کروڑ خرچ کرتے ہیں، دو راستے تھے ایک سینیٹر شپ کے مزے لوٹتا یاظلم کے خلاف آوازاٹھاتا،سب چیزوں کو لات ماری اور ایم کیو ایم کو چھوڑ کر آ گئے۔

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ کراچی دنیا کے دس نا قابل رہائش شہروں میں شا مل ہو گیا ہے،سب کچھ ایک دن میں ٹھیک نہیں ہوگا۔

رحمٰن عرف بھولا بینکاک میں غیرقانونی مقیم تھا

کراچی کے سانحہ بلدیہ فیکٹری کا مرکزی ملزم رحمٰن عرف بھولا بینکاک میں غیرقانونی مقیم تھا۔چند دن قبل عبدالرحمٰن بھولا بینکاک میںرائل گارڈن ہوٹل کےکمرہ نمبر405سے مقامی پولیس اور انٹر پول کے ہاتھوں گرفتارہوا۔47 سالہ عبدالرحمٰن نے 17 جون 2009ء کو پہلا پاسپورٹ بنوایا۔اس نے پاسپورٹ نمبر ڈی کیو9159251 پر پہلا سفر دبئی تک کیا، سانحہ بلدیہ کے فوری بعد اس نے دبئی کا رہائشی ویزہ لگوایا اور دبئی سے ہی 24 جنوری 2014ء کو نیا پاسپورٹ جاری کرایا۔اس کے نئے پاسپورٹ کی مدت 23 جنوری 2019ء تک ہے۔2015 جے آئی ٹی سامنے آئی تو ملزم دبئی میں قیام پذیر تھا۔ 26 جنوری 2015 کو دبئی سے ملائیشیا کا ملٹی پل انٹری کا ویزہ لیا اوروہ جنوری 2015 میں ہی دبئی سے کوا لالمپور روانہ ہوگیا۔رحمٰن بھولے کا ملائیشیا کا ویزہ 18 نومبر 2016ء کو ختم ہوگیا،پھر اس نے مقامی ایجنٹوں کی مدد سے تھائی لینڈ فرار کی منصوبہ بندی کی۔ 18 نومبر کو ملائشیا کے شہر سرحدی مقام کوتا بارو پہنچا۔وہ انسانی اسمگلروں کی مدد سے تھائی بارڈر عبور کرکے گولک پہنچا، تھائی ایجنٹوں نے اُسے مخصوص راستے سے بینکاک پہنچایا۔

پاکستانی وفد کو بھارت بھیجنا غلطی تھی، پرویز مشرف
l_153503_093336_updates

کراچی : سابق صدر پرویز مشرف کہتے ہیں ہارٹ آف ایشیا کانفرنس کیلئے پاکستانی وفد کو بھارت بھیجنا ہی نہیں چاہئے تھا، خواہ مخواہ پاکستان کا امیج خراب ہوا۔

سماء کے پروگرام نیوز بیٹ میں گفتگو کرتے ہوئے سابق صدر اور جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف نے پاکستانی وفد کو بھارت بھیجنا غلطی قرار دے دیا، ان کا کہنا تھا کہ ہارٹ آف ایشیا کانفرنس میں شرکت کیلئے پاکستانی وفد کو بھارت بھیجنا ہی نہیں چاہئے تھا۔ان کا کہنا ہے کہ بھارت نے پاکستانی وفد کو ایئرپورٹ پر بھی روکا، پریس کانفرنس بھی نہ کرنے دی، خواہ مخواہ پاکستان کا امیج خراب ہوا

فیصل ایدھی کےساتھ ہوٹل انتظامیہ کی بدتمیزی
l_153503_093336_updates

کراچی: ایدھی فاؤنڈیشن کے سربراہ فیصل ایدھی نے کہا ہے ان کے عملے نے ساراکام کیا۔بعدمیں ہمیں بندوقیں دکھا کرانتظامیہ نے باہر نکال دیا۔

ایدھی فاؤنڈیشن کے سربراہ فیصل ایدھی نے بتایا کہ ہوٹل میں آگ لگنے کےبعد ایدھی کے رضاکار فوری طورپر یہاں پہنچ گئے تھے۔ انھوں نے بتایاکہ زخمیوں اورمتاثرین کوہم نے باہرنکالا۔انتظامیہ کی جانب سے ہنگامی راستے کی کوئی آگاہی  فراہم نہیں کی گئی۔اس دوران ایدھی کے رضاکاروں نے خودراستہ ڈھونڈا اورلوگوں کوراستہ بتایا۔فیصل ایدھی نے شکوہ کیاکہ جب ہم نے سب کچھ کرلیاتوہمیں باہرنکال دیا۔ فیصل ایدھی کا کہناتھاکہ ایدھی کے رضاکاروں پرانتظامیہ نےبندوقیں تان لیں

سعدرفیق بھی شیخ رشید کے نقش قدم پر
l_153503_093336_updates

کراچی: سیاست اورمخالفین پرتنقید کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ گزشتہ دنوں مشن لاک ڈاؤن اسلام آباد کے دوران شیخ رشید پر طنز کے ڈونگرے برسانے والے وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق بھی شیخ صاحب کے نقش قدم پر چل پڑے۔

اٹھائیس اکتوبرکو جلسہ کرکے دکھانے کا چیلنج پورا کرنے والے شیخ رشید گرفتاری سے بچنے کیلئے راولپنڈی کے کمیٹی چوک پرموٹرسائیکل پربیٹھ کر پہنچےتھے اورخطاب کے بعد یہ جا وہ جا ہوئے تومسلم لیگ ن کی جانب سے شیخ رشید کی موٹرسائیکل یاترا پرانہیں خاصے آڑے ہاتھوں لیا گیا تھا۔شیخ رشید توخود کوعوامی سیاستدان قراردیتے ہیں ،موٹرسائیکل سواری کو بھی انہوں نے اسی سے جوڑا مگر وفاقی وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق بھی تنقید کرنے کے بعد اب انہی کے نقش قدم پر چل پڑے ہیں۔ پاکستان مسلم لیگ ن کے آفیشل فیس بک پیج پرایک ویڈیوشیئر کی گئی ہے جس میں خواجہ سعد رفیق اپنے حلقے کا دورہ موٹر سائیکل پر بیٹھ کرکر رہے ہیں۔حلقہ این اے 125 کے دورے کی یہ ویڈیو دیکھ کر واقعی لگتا ہے کہ سیاست میں اپنے لیے سب جائز ہے

Next Page